پشاور، نشتر ہال میں قبائل صوبہ تحریک کے زیر انتظام گرینڈ قبائلی جرگہ

صوبہ خیبرپختونخوا کے صدر مقام پشاور کے نشترحال میں قبائل صوبہ تحریک کے زیرانتظام گرینڈ قبائلی جرگہ کا انعقاد کیا گیا جس میں تمام ایجنسیوں کے مشران، سیاستدان اور مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والے لوگوں کی کثیر تعداد میں شرکت کی۔

شرکا نے خطاب کرتے ہوئے بریگیڈئیر ریٹائرڈ سید نزیر مہمند نے کہا کہ فاٹا اصلاحات میں قبائلی عوام کی اکثریت سے مشاورت نہیں کی گئی۔ان کا کہنا تھا کہ اصلاحات کمیٹی کو قبائل نے انضمام کا اختیار نہیں دیا۔ جرگہ اراکین نے موقف اہنایا کہ ہمارے مستقبل، ہماری شناخت، ہماری قربانیوں کو ختم  کرنے کی اجازت نہیں دیں گے۔ گرگہ نے مطالبہ کیا کہ قبائل کو اپنا صوبہ، اپنا نام اور اختیار دیا جائے۔ شرکا کا کہنا تھا کہ قبائل کو زبردستی زیر تسلط رکھنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ قبائل صوبہ تحریک کے حامیوں کا کہنا تھ کہ فاٹا سیکرٹریٹ، ایف ڈی اے، گورنر ہاوس، پولیٹیکل انتظامیہ اور دیگر اداروں میں غیر مقامی افراد کا راج ہے، غیر مقامی افراد فاٹا کے لوگوں پر حکمرانی کررہے ہیں اور انہیں وسائل پر حق نہیں دیا جارہا، ان کا مطالبات ہے کہ ان کو اپنے وسائل پر اختیارات دیے جائیں،تمام ایجنسیوں میں میڈیکل کالجز، انجینئرنگ کالجز اور یونیورسٹیاں بنائی جائیں، قبائلی جرگہ سسٹم میں مداخلت بند، اجتماعی ذمہ داری قانون ختم اور انسانی حقوق دیئے جائیں، ہمیں انضمام نہیں بلکہ اپنا صوبہ، اپنا وزیراعلی، اور اپنا گورنر چاہیئے،

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s