میڈیا میں وزیراعلی ہاوس میں تعمیرہونے والے سوئمنگ پول کے حوالے سے میڈیا رپورٹس پر ردعمل

وزیر اعلیٰ سیکرٹریٹ خیبر پختونخوا پشاور کے ترجمان نے میڈیا کے بعض نمائندوں کی جانب سے من گھڑت،بے بنیاد اور ذہنی اختراع پر مبنی رپورٹنگ کی تردید کی ہے جس میں وزیر اعلیٰ ہاؤس میں سوئمنگ پول اور دیگر تعمیرات کے پراجیکٹ کی اہمیت اور دور رس افادیت کو پس پشت ڈالتے ہوئے مبینہ طور پر بھاری اخراجات کا الزام لگایا گیا ہے۔اصل صورتحال کی وضاحت کرتے ہوئے ترجمان نے بتایا کہ ممتاز ملکی اور غیر ملکی سرمایہ کاروں اور ٹیکس ادا کرنے والوں کے لئے وزیر اعلیٰ ہاؤس کو صوبائی حکومت کا ایک گیسٹ ہاؤس (مہمان خانہ) بنانے کاایک منصوبہ بنایا گیا ہے جبکہ سوئمنگ پول پہلے سے وزیر اعلیٰ ہاؤس کی مجموعی تزئین و آرائش کا ایک حصہ ہے۔وزیر اعلیٰ پرویز خٹک کے زیر استعمال وزیر اعلیٰ ہاؤس انیکسی کے باالمقابل عام رہائش گاہ رہی ہے اور پرویز خٹک نے کبھی بھی وزیر اعلیٰ ہاؤس کو اپنی رہائش گاہ کے طور پر استعمال نہیں کیا جس طرح تمام سابق وزرائے اعلیٰ نے بطور رہائش گاہ استعمال کیا۔
جب وزیراعلیٰ وزیراعلیٰ ہاؤس میں رہتے نہیں ہیں اور جب یہ منصوبہ حکومت کی مدت ختم ہونے تک مکمل ہونا تھا تو وزیراعلیٰ کا سوئمنگ پول استعمال کرنا کتنی منفی سوچ ہے یہ سمجھنا بہت ضروری ہے۔

ترجمان نے مزید کہا کہ پرویز خٹک نے وزیر اعلیٰ ہاؤس کے استعمال کے خلاف مختلف مواقعوں پر کھلے دل و دماغ سے گفتگو بھی کی تھی اور موجودہ حکومت کے قیام کے بعد بھی حیات آباد میں کرایے کے مکان میں اپنی رہائش جاری رکھی۔تاہم انہیں سیکیورٹی کے مقاصد کے لئے وزیر اعلیٰ ہاؤس منتقل ہونے کا مشورہ دیا گیا لیکن انہوں نے وزیر اعلیٰ ہاؤس منتقل ہونے سے صاف انکار کر دیا تاہم سیکیورٹی اہل کاروں کی مسلسل گزارشات پر حکومت نے ان کیلئے ایک عام سے بنگلے میں ان کی رہائش کا انتظام کی جس بنگلے میں قبل ازیں انتظامی سیکرٹریز رہتے تھے وزیر اعلیٰ اس میں شفٹ ہو گئے۔ترجمان نے مزید وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ وزیر اعلیٰ نے عام محافل اور میڈیا کے نمائندوں کے ساتھ بات چیت میں بھی بعض مواقعوں پر واضح کیاتھا کہ وہ وزیر اعلیٰ ہاؤس کو کبھی اپنی رہائش گاہ کے طور پر استعمال نہیں کریں گے بلکہ اسے بعض بڑے مقاصد کے لئے استعمال کیا جائے گا پھر اس بات کافیصلہ کیا گیا کہ ملکی اور غیر ملکی سرمایہ کاروں اور بڑے ٹیکس ادا کرنے والوں کو وزیر اعلیٰ ہاؤس میں قیام کرنے کی دعوت دی جائے گی۔ترجمان نے پراجیکٹ کے پس پشت بہتر اور مفید تر مقاصد کو باالکل نظر انداز کرتے ہوئے بعض میڈیا رپورٹرز کی جانب سے یکطرفہ ،من گھڑت اور ذہنی اختراح پر مبنی رپورٹنگ میں وزیر اعلیٰ کوغیر ضروری اور بلا جواز طور پر ملوث کرنے کو صوبے اور عوام کے وسیع تر مفاد میں بننے والے منصوبوں سے عوام کو متنفر اور گمراہ کرنے کی ایک مذموم کوشش قرار دیا ہے جو اخلاقی طور پر بھی مثبت صحافت کی نفی کرتی ہے

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s