دیر بالا, مدرسہ قاری کا سات سالہ شینوگئ پر بہیمانہ تشدد

زیر نظر تصاویر دیر بالا تحصیل واڑی کے دورافتادہ علاقہ نہاگ درہ گچیل کے سات سالہ بچی شینوگئ کی ہے جوکہ ایک غریب گھرانے سے تعلق رکھتی ہے ۔اس بچی کو دینی تعلیم کے حصول کے لئے والدین نے مقامی مدرسہ میں داخل کرادیا جہاں مدرسہ کے قاری نے کسی بات پر طیش میں آکر پھول جیسی بچی کو جس بےدردی سے تشدد کا نشانہ بنایا اس کے واضح نشانات بچی کے جسم پر موجود ہے ۔شینوگئ کی حالت غیر ہونے پر ورثاء نے علاج کے لئے ہسپتال پہنچایا تو زخموں سے چور چور جسم کو دیکھ کر ہسپتال میں موجود ڈاکٹرز اور دیگر لوگ ابدیدہ ہوگئے ۔بچی کو شدید زخمی حالت میں تیمرگرہ ہسپتال ریفر کردیا گیا ہے جبکہ تشدد میں ملوث قاری ولی محمد کے خلاف مقامی پولیس نے رپورٹ درج کرکے تفتیش شروع کردی ہے ۔اب سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ وحشیانہ تشدد کا شکار ہوانے والی اس پھول جیسی بچی کو انصاف ملے گا یا روایتی جرگوں اور سیاسی مداخلت کی بیھنٹ چڑھ کر یہ واقعہ ماضی کا حصہ بن جائےگی

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s