خیبر پختونخوا میں دہشت گردی ، فورسز پر حملوں اور ٹارگٹ کلنگ واقعات کی رپورٹ جاری

خیبر پختونخوا میں دہشت گردی ، فورسز پر حملوں اور ٹارگٹ کلنگ واقعات کی رپورٹ جاری کر دی گئی، رپورٹ کے مطابق صوبے میں چھ سالوں کے دوران دہشت گردی ، ٹارگٹ کلنگ اور فورسز پر حملوں کے 4ہزار 120واقعات پیش آئے

محکمہ داخلہ خیبر پختونخوا کی جانب سے جاری کردہ رپورٹ کے مطابق صوبے میں چھ سالوں کے دوران دہشت گردی ، ٹارگٹ کلنگ،فورسز پر حملوں کے 4ہزار 120واقعات پیش آئے جبکہ 116خودکش حملے اور ایک ہزار 894بم دھماکے ہوئے۔ رپورٹ کے مطابق سیکورٹی فورسز کے اہلکاروں پر 1ہزار 287حملے ہوئے،جبکہ ٹارگٹ کلنگ کے 507واقعات جبکہ 316راکٹ حملے ہوئے، رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ آپریشن ضرب عضب اور نیشنل ایکشن پلان کے باعث دہشت گردی کے واقعات میں کمی ہوئی ، رپورٹ کے مطابق گذشتہ سال صوبے میں 184بم دھماکے اور ہینڈ گرنیڈ حملے جبکہ رواں سال اب تک 89بم دھماکے اور ہینڈ گرنیڈ حملے ہوئے،گذشتہ سال سیکورٹی فورسز پر حملوں کے 180جبکہ رواں سال 122واقعات پیش آئے، رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ 2015میں گیارہ راکٹ حملے جبکہ رواں سال اب تک ایک راکٹ حملہ ہوا،گذشتہ سال کے مقابلے میں رواں سال ٹارگٹ کلنگ کے واقعات میں 23فیصد کمی آئی۔رپورٹ کے مطابق سرچ اینڈ سٹرائیک آپریشن ،سی ٹی ڈی کاروائیاں اور بہتر انٹیلی جنس شیرنگ دہشت گردی میں کمی کی وجہ ہےsix-us-soldiers-killed-in-helicopter-crash-in-afghanistan

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s