صحافی نہیں، کتا ہوں میں!!!

جاگتا انسان

کہتے ہیں کہ اگر کتے کی دس صفات میں سے ایک صفت بھی انسان میں آجائے تو وہ ولی بن سکتا ہے۔ ہاں اگر ایک سے زیادہ صفات انسان میں پیدا ہو جائیں تو وہ صحافی کہلاتا ہے۔
اپنے مالک سے اٹوٹ محبت کی وجہ سے کتے کی وفاداری کی مثالیں دی جاتی ہیں۔ ایک صحافی بھی دل و جان سے اپنے مالک کی وفاداری کرتا ہے۔ کتے کی طرح صحافی بھی اپنے مالک کو دیکھ کر خوشی سے اچھلنا کودنا شروع کر دیتا ہے۔ مالک تو ایک طرف صحافی معاشرے کے ہر طبقے سے وفاداری، محبت اورجانبداری کے دعوے بھی کرتا ہے۔
کتے کی طرح صحافی کی سونگھنے کی حس بھی حد سے زیادہ تیز ہوتی ہے۔ صحافی ہر خبر کو سونگھ لیتا ہے جسے صحافتی زبان میں نیوز سینس یا خبریت کہا جاتا ہے۔ یہ دم ہلاتا ہر خبر کا پیچھا کرتا ہے۔ خبر ملنے کی صورت میں…

View original post 331 more words

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s